Loading the player...

Nohay 2019 | Hai Apni Sakina Ka Abbas Ko Ghum | Syed Raza Abbas Zaidi | Mola Abbas New Noha 2019

  • Nohay 2019 | Hai Apni Sakina Ka Abbas Ko Ghum | Syed Raza Abbas Zaidi | Mola Abbas New Noha 2019
    ------------------------------------------------------
    Kalam Title | Hai Apni Sakina Ka Abbas Ko Ghum
    Recited By | Syed Raza Abbas Zaidi
    Poetry By | Janab Husnain Akbar
    Composition, Concept and Arrangemant | Raza Shah
    Volume | Album 14th/2019 20
    Chorus By | Rajab Ali Khan , Amanat Ali Khan , Ghulam Abbas
    Video | Tna Production Ali Arman
    Label | RAZ Records
    Cover Design By | Qasim Zaidi
    Audio Recorded & Master/Mixing | ODS Studio
    ---------------------------------------------
    #HaiApniSakinaKaAbbasKoGhum #Nohay2019 #SyedRazaAbbasZaidi
    ---------------------------------------------
    On the arrival of Muharram Many Condolences to Prophet Muhammad (Saww) and Hazrat Fatima Zahra (as) and Especially to Imam e Zamana (AJF)
    --------------------------------------------
    Follow US On Our Social Media Channels:
    "Official Website"
    www.razaabbas.com
    "Follow on Facebook"
    www.facebook.com/SyedRazaAbbasZaidiOfficial
    "Subscribe Youtube Channel"
    www.youtube.com/c/syedrazaabbaszaidi
    "Follow on Instagram"
    www.instagram.com/syedrazaabbaszaidi
    "Follow on Twitter"
    twitter.com/razaabbaszaidi
    "Follow on SoundCloud"
    soundcloud.com/syedrazaabbaszaidiofficial
    -------------------------------------------
    NOHA LYRICS
    ہے اپنی سکینہ کا عباس ع کو غم مولا ع
    پیاسی رہی شہزادئ اور مرتے ہیں ہم مولا ع
    خاتونِ جناں س نے یوں گرنے سے بچایا ہے
    رہوار سے بی بی س نے خود مجھ کو اتارا ہے
    ہیں خاک پہ بی بی س کے یہ نقشِ قدم مولا ع
    ریتی پہ تیرا خدام پیروں کو رگڑتا ہے
    ہیں زخم لگے اتنے خوں جسم سے بہتا ہے
    رک رک کے نکلتا ہے اب سینے سے دم مولا ع
    تشریف جو لائیں ہیں تعظیم کو اٹھ جاتا
    سر اپنا جھکا کر میں آداب بجا لاتا
    اٹھنے سے بھی قاصر ہوں بازو ہیں قلم مولا ع
    مقتل میں پڑا رہنے دیجیے گا مرا لاشہ
    عباس ع کی غیرت کو برداشت نہیں گا
    میت پہ مری روئیں اب اہلِ حرم مولا ع
    جاتے ہوئے حسرت ہے یہ آپ کے خادم کو
    بس ثانیءِ زہرا س کے خیمے کی زیارت ہو
    رُخ پھیر دیں اُس جانب اب وقت ہے کم مولا ع
    میں آپ کے چہرے کو دیکھوں تو بھلا کیسے
    اک تیر سے زخمی ہے اک آنکھ ہے تر خوں سے
    یہ تیر ھٹا دیں تو ہو جائے کرم مولا ع
    چھنتےہوئے بی بی س کے دکھتے ہیں گہر مجھکو
    روتی ہوئی آتی ہے معصومہ س نظر مجھکو
    کس طرح سے جھیلے گی وہ رنج والم مولا ع
    آتی ہے صدا کوئی بڑھتی ہے پریشانی
    جیسے کہ کوئی بچی کہتی ہو چچا پانی
    ہے موت سے بڑھ کر یہ زہرا س کی قسم مولا ع
    عباس ع کے خیمے میں مولا ع نے علم رکھ کے
    کاٹی ہیں طنابیں یوں اکبر کہ ابھی جیسے
    دفناتے ہیں غازی ع کی حسرت میں علم مولا ع

    Category : Nohay

    #nohay#2019#hai#apni#sakina#ka#abbas#ko#ghum#syed#raza#zaidi#mola#new#noha

    0 Comments and 0 replies
arrow_drop_up