Loading the player...

Nohay 2019 - Abbas Mar Gaye Ali Akbar Juda Howa | Syed Raza Abbas Zaidi | Mola Hussain Noha 2019

  • Bismillah...Ali un Wali ul Allah
    ----------------------------------------------
    Nohay 2019 - Abbas Mar Gaye Ali Akbar Juda Howa | Syed Raza Abbas Zaidi | Mola Hussain Noha 2019
    ----------------------------------------------
    Kalam Title | Abbas Mar Gaye Ali Akbar Juda Howa
    Recited By | Syed Raza Abbas Zaidi
    Poetry By | Mir Takalum
    Istefada-e-Kalam | Mir Anees (AR)
    Composition, Concept and Arrangement | Raza Shah
    Volume | Album 14th/2019
    Chorus By | Rajab Ali Khan , Amanat Ali Khan , Ghulam Abbas
    Video | Tna Production Ali Arman
    Label | RAZ Records
    Cover Design By | Qasim Zaidi
    Audio Recorded & Master/Mixing | ODS Studio
    ---------------------------------------------
    #AbbasMarGayeAliAkbarJudaHowa #Nohay2019 #SyedRazaAbbasZaidi
    ---------------------------------------------
    Follow US On Our Social Media Channels:
    "Official Website"
    www.razaabbas.com
    "Follow on Facebook"
    www.facebook.com/SyedRazaAbbasZaidiOfficial
    "Subscribe Youtube Channel"
    www.youtube.com/c/syedrazaabbaszaidi
    "Follow on Instagram"
    www.instagram.com/syedrazaabbaszaidi
    "Follow on Twitter"
    twitter.com/razaabbaszaidi
    "Follow on SoundCloud"
    soundcloud.com/syedrazaabbaszaidiofficial
    -------------------------------------------
    NOHA LYRICS
    عباس مرگئے علی اکبر جدا ہوا
    ہم سے کسی نے یہ بھی نہ پوچھا کے کیا ہوا۔
    واحسرتا کے ٹوٹ گئی ہے مری کمر
    واغربتا اب آنکھوں سے آتا نہیں نظر
    جینے کا اب جواز ہمارے نہیں رہا
    خالی علم اٹھا کے میں خیمے میں لے گیا
    لایا ہوں تنہا لاشہِ ہمشکلِ مصطفے
    غربت پہ میری ہنستا ہے لشکر یزید کا
    غازی کے ٹکڑے دیکھ کے ٹکڑے ہوا جگر
    داڑھی سفید ہوگئی اکبر کی لاش پر
    اک دو پہر میں ہم پہ ستم کیسا ہوگیا
    کہتے ہیں اب بلائیے امداد کے لئے
    بولو حسین اکبر و غازی کہاں گئے
    دیتے ہیں طعنے پرسے کے بدلے یہ اشقیا
    سوچا تھا مجھ سے آ کے کہیں گے یہ کلمہ گو
    دونوں پرسہ دینے ہم آئیں ہیں آپ کو
    حسرت یہ لے کےقبر میں مظلوم جائے گا
    مر جائے گر کسی کا کوئی بھائی یا پسر
    اُس کو دلاسے دیتے ہیں آ آ کے سب بشر
    ہائے مگر ہماری غریبی کی انتہا
    چاروں طرف ہے تیروں کی بوچھار دیکھ لو
    ہم پر سبھی اٹھائے ہیں تلوار دیکھ لو
    زینب بتاؤ اب کہاں جاکر کریں گِلا
    خنجر تلے بھی شہہ کو تکلم یہی تھا غم
    کتنے غریب ہوگئے کرب و بلا میں ہم
    خنجر رواں تھا پڑھتے تھے مولا یہ مرثیہ
    -------------------------------------------------
    Copyright strictly prohibited
    © Copyright Information:
    • All Rights of Nauhas, artwork, logo, audio & video are reserved by RAZ Records .

    Category : Nohay

    #nohay#2019#abbas#mar#gaye#ali#akbar#juda#howa#syed#raza#zaidi#mola#hussain#noha

    0 Comments and 0 replies
arrow_drop_up